Breaking News

یا اللہ یا وھاب کی ایک تسبیح اس طرح پڑھ لوفرشتے غیب سےآپ کےلئے رزق کا انتظام فرمائیں گے

آج کے اس دور میں ہر کوئی چاہتا ہے کہ اس کے پاس بے شمار دولت اور رزق ہو تا کہ وہ اپنی زندگی خوشحالی سے بسر کرے۔ مگر بد قسمتی سے ایسا کچھ بھی نہیں ہوتا کیو نکہ اللہ جسے چاہے غنی کر دے اور جسے چاہے کچھ بھی عطا نہ کرے۔ ہمیں چاہیے کہ ہم پانچوں نمازوں کی پابندی کر یں اور اپنے سے کم تر لوگوں کا سہار ابنیں تا کہ اللہ ہم سے راضی ہو جائے۔اگر آپ چاہتے ہیں کہ

آپ کے پاس بے تہاشہ رزق اور دولت ہو۔ تو آپ اس عمل کو اللہ کی ذات پر پختہ اور کامل یقین رکھتے ہوئے کر لیں۔ عمل اور ضروری ہدایات: یہ وظیفہ آپ نے نمازِ فجر کے بعد کر نا ہے اور “یا اللہ یا وھاب ” کو سو مرتبہ پڑ ھنا ہے اور ایک مرتبہ درودِ پاک پڑھنا ہے آخر میں اللہ پاک سے دعا مانگنی ہے اس عمل کو تین روز تک کر نا ہے۔ ان شاء اللہ اس عمل کی بر کت سے اللہ آپ کو غیب سے دولت اور رزق عطا کرے گا۔ اللہ پاک آپ کے دولت اور رزق میں بے تہاشہ اضافہ کر ے گا۔ اللہ تعالیٰ آپ کو کبھی کسی کا محتاج نہیں کرے گا۔ اللہ ہم سب کو ہماری اوقات کے مطا بق نہیں بلکہ اپنی شان کے مطابق نعمتیں عطا فر ما ئے۔اگر آپ اپنے لیے دعا مانگنے سے پہلے دوسروں کے لیے دعا ما نگیں گے تو

ان شاء اللہ آپ کی دعا ضرور قبول ہوگی۔ وظیفہ کرنے سے پہلے پہلے کچھ نہ کچھ صدقہ و خیرات کر لیا کریں۔ ہر وظیفہ انسان کی بہتری کے لیے ہی ہوتا ہے اللہ پاک انسانی کی بھلائی ہی چاہتا ہے اور چاہتا ہے کہ اس کا بندہ ہر قسم کی مشکل سے جلد از جلدآزاد ہو جائے۔ اللہ تعالیٰ نہیں چاہتا کہ اس کا بندہ کسی بھی قسم کا کوئی دکھ دیکھے اور اس کے علاوہ نہ ہی کوئی پر یشانی دیکھے۔ مگر اللہ پا ک اپنے بندوں پر مشکلات اور آزما ئشیں صرف اسی لیے ہی ڈالتا ہے تا کہ اس کو آزما سکے کہ میرا بندہ کس قدر صبر کر تا ہے اور کس قدر ہماری تعریف کر تا ہے بس اسی لیے یہ آزما ئشیں اور مشکلات نازل فر ما تا ہے ایسا نہیں ہے کہ

انسان سے اللہ پاک نفرت فر ما تا ہے ایسا بالکل نہیں ہے۔ زندگی کے ہر پہلو میں اللہ نے اپنے بندے کی مدد فر مائی ہے۔ اس وظیفے کو کر کے آپ اپنے لیے رزق کا انتظام کر سکتے ہیں۔

About admin

Check Also

کسی خوبصورت عورت کے شوہر نے اچانک داڑھی رکھ لی ، جب پڑوسن نے عورت سے پوچھا یکا یک تبدیلی کیسے آئی تو اس نے کیا جواب دیا ؟ ارشاد بھٹی کی ایک دلچسپ غیر سیاسی تحریر

مستنصر حسین تارڑ کا کہنا ’’کچھ لوگوں کو ’کیسے ہو‘ نہیں بلکہ ’کیوں ہو‘ کہنے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *