گنٹھیا کے شدید درد کا علاج

آج آپ کو ہم بتائیں گے ۔ گنٹھیا کی بیماری کا سوفیصد علاج  بتائیں گے ۔ جو بہت ہی کارآمد اور مجرب الخاص نسخہ ہے۔ انشاءاللہ! جوبھی اس نسخے کو استعمال کرے گا۔ وہ گنٹھیا کے دردے سے نجات پائےگا۔ اس نسخے کو تیار کرنے کا طریقہ اس طرح سے ہے۔ پانچ چمچ کالا زیرہ  جو کہ عام دستیاب ہوتا ہے۔ اور پانچ ہی چمچ خشک ادرک اور ڈھائی چمچ کالی  مرچ لیں۔ پھر تینوں اجزاء کو باریک پیس کر پاؤڈر بنا لیں۔ او رکسی صاف شیشی میں محفوظ رکھ لیں۔ اب اس سفوف میں سے آدھا آدھا چمچ صبح  ، دوپہر اور شام پانی کے ساتھ تین ہفتے استعمال کریں۔ انشاءاللہ! گنٹھیا کے درد مکمل آرام آجائےگا۔ گنٹھیا دراصل یوریک ایسڈ کے جمع  ہونے کا نتیجہ ہے۔ اس مرض میں علاج کےساتھ پرہیز ضرو ر کریں۔ جن میں لال گ وشت ، پھلیاں نمایاں ہیں۔ اس نسخے کو آزمائیں۔ انشاءاللہ! م ایوسی  نہیں ہوگی۔ متعدد طبی تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آچکی ہے کہ ادرک کے اندر ایسی خاصیت ہوتی ہے

جو جوڑوں کے درد کے لیے استعمال کی جانے والی ادویات کا اثر بڑھا دیتی ہے۔ مگر ادویات کے بغیر بھی یہ کافی مفید ثابت ہوتی ہے، اس کے لیے ادرک کو پیس کر سفوف کی شکل میں استعمال کریں یا اس کے باریک ٹکڑے کرکے اسے چائے کے لیے ابالے جانے والے پانی میں 15 منٹ تک ڈبو کر رکھیں، اس کا مستقل استعمال جوڑوں کے درد میں کمی لانے کے لیے بہترین ثابت ہوگا۔ اگر جوڑوں کے شکار ہیں تو فاسٹ ، جنک اور تلی ہوئی غذاﺅں کو ترک کردیں۔ جوڑوں کے مرض کے شکار مریضوں پر کی جانے والی ایک سوئیڈش تحقیق کے مطابق جن لوگون نے مچھلی، تازہ پھلوں و سبزیوں، گندم یا دیگر اجناس، زیون کے تیل، نٹس، ادرک لہسن وغیرہ پر مشتمل خوراک کو اپنی عادت بنالیا، انہیں جوڑوں کی سوجن کا کم سامنا ہوا اور ان کی جسمانی صحت میں کافی حد تک بہتری آئی۔

ایک کورین تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ جوڑوں کے درد میں مبتلا افراد کی تکلیف میں اس وقت کمی آگئی جب انہیں مختلف اقسام کے مصالحوں کی خوشبو سونگھائی گئی جن میں کالی مرچ، گرم مصالحہ اور دیگر شامل تھے۔ آپ کو اس کے لیے دو پلاسٹک کے ڈبوں کی ضرورت ہوگی، ایک میں ٹھنڈا پانی اور کچھ آئس کیوبس بھردیں جبکہ دوسرے میں ایسا گرم پانی ہو جس کا درجہ حرارت آپ چھونے پر برداشت کرسکیں۔ پہلے اپنے تکلیف دہ جوڑوں ٹھنڈے پانی والے ڈبے میں ایک منٹ کے لیے ڈبو دیں اور اس کے بعد 30 سیکنڈ تک گرم پانی والے ڈبے میں متاثرہ جگہ کو ڈبو دیں۔ اسی طرح ڈبوں کو پندرہ منٹ تک بدلتے رہیں، مگر ہر ڈبے میں تیس سیکنڈ تک ہی متاثرہ جگہ کو ڈبوئیں تاہم آخر میں اس کا اختتام ایک منٹ تک ٹھنڈے پانی والے ڈبے میں تکلیف میں مبتلا جگہ کو ڈبو کر کریں۔

About admin

Check Also

”حضرت موسیٰؑ جب کوہ طور کی طرف جانے لگے توراستے میں ایک نیم برہنہ“

حضرت موسیٰ علیہ السلام کوہ طور کی طرف جانے لگے تو راستے میں ایک شخص …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *