Breaking News

میرے آقا ؐ کا عمل زندگی بدل ڈالتا ہے خودآزمایا ہوا رمضان کا وہ وظیفہ جو محمدؐ خود تمام وظیفوں کو چھوڑ کراداکرتے تھے

رمضان المبارک  کا مہینہ شروع ہوچکا ہے۔ دنیا میں جہاں کہیں مسلمان بہن بھائی موجود ہیں۔ وہ روزہ رکھ رہے  ہیں۔ نماز پڑھ رہے ہیں۔ تراویح پڑھ رہے ہیں۔ وتر ادا کررہے ہیں۔ اللہ تعالیٰ کی حمد وثناء بیان کررہے ہیں۔ یہی وجہ  ہے کہ پوری دنیا کے اندر جتنی مسلم کمیونٹی ہے وہ ساری کی ساری وہ تمام وظائف وہ تما م چیزیں بھی پرفارم کررہی ہے۔

جس سے رزق میں برکت ہوتی ہے۔ گن اہوں کی بخشش ہوتی ہے جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ رمضان المبارک کے تین عشرے  تین مختلف چیزوں پر مشتمل ہے۔ جن میں پہلا عشرہ  مکمل طور پر رحمتوں اور برکتوں کا ہے۔ دوسرے عشرے آپ لوگوں اللہ تعالیٰ سے بخشش مانگتے ہیں۔ اور تیسرا عشرہ آپ کوقبر وسے نجات دلاتا ہے۔ آپ کو پہلے ، دوسرے اور تیسرے عشرے کے حوالے سے ایک ایسا ورد بتانے والے ہیں جو کہ یونیورسل ہے۔ یعنی آپ چلتے پھرتے آپ یہ عمل کرسکتےہیں۔ اس سے آپ کو متعدد فوائدملیں گے۔ اس سے آپ لوگوں کے گن اہ تو مع اف ہوتے ہیں اور ساتھ ساتھ ا للہ پاک کی ذات آپ کو رحمتیں ، برکتیں اور سعادتیں اور نعمتیں بھی عطا کرتا ہے۔ یہ بہت آسان اور سادہ سا وظیفہ ہے۔   حضرت ابو ذر سے نقل ہے کہ انہوں نے حضور اکرمﷺ سے محبوب ترین کلام پوچھا تو آپ ﷺ نے آگے یہ وظیفہ بتایا۔

یہ وظیفہ کیا ہے؟ “سبحان  اللہ وبحمدہ سبحان اللہ العظیم  وبحمدہ استغفرہ اللہ “۔یہ وظیفہ جن افراد نے پڑھ  لیا۔ ان کی دنیا اور آخرت سب بن جائے گی۔ کہاجاتا ہے حضرت ظہیر بن حلب نے بیان کیا انہوں نےکہا کہ ابن فضائل میں یہ بیان کیا۔ انہوں نے حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے بیان کیا کہ حضور اکرم ﷺ نے فرمایا: دوکلمے زبان پرہلکے ہیں۔ اور ترازو پر بہت بھار ی اور رحمان کو بہت عزیز ہیں۔ پوچھاگیا کہ وہ کون سے دو  کلمات ہیں ۔ تو آپ ﷺ نے فرمایا: “سبحان  اللہ العظیم ، سبحان اللہ وبحمدہ “۔ یعنی جب آپ اسے پڑھیں گے  تو یہ دو الگ الگ کلمات ہیں۔

ایک کلمہ ” سبحان اللہ وبحمدہ ” اور دوسرا ہے ” سبحان اللہ  العظیم وبحمدہ استغفراللہ ”  ۔ اس سے آپ کو یہ پتا چلتا ہے کہ اللہ تعالیٰ کی ذات کس طریقے سے ایک چھوٹا ساوظیفہ کرنے سے آپ تمام احباب کو  رحمتیں ، برکتیں اور سعادتیں عطاکرتا ہے۔ یہ اللہ کے محبوب کلام میں سے ہے۔ نبی کریم ﷺ کا فرمان ہے کہ حضرت ابو ذر سے نقل ہے کہ آپ ﷺ سے محبوب ترین کلمات پوچھا تو آپﷺنے فرمایا: “انا حب الکلام الا اللہ سبحان اللہ وبحمدہ  ” یعنی اللہ کے ہاں محبوب ترین کلمات “سبحان اللہ وبحمدہ ” ہے ۔یہ میزان میں کافی وزنی ہے۔

ایک صحابی نے عرض کیا کہ یا رسول اللہﷺ دنیا نے مجھ سے پیٹھ فرمالی۔ تو آ پ ﷺ نے فرمایا: کیا تجھے وہ تسبیحات یاد نہیں جو تجھے تسبیح فرشتوں اور مخلو ق کی  ہے  جس کی برکت  سے روزی دی جاتی ہے جب صبح صادق طلوع ہوتو یہ تسبیح سو مرتبہ پڑھا کرو۔ “سبحان  اللہ وبحمدہ سبحان اللہ العظیم  وبحمدہ استغفرہ اللہ “۔دنیا تمہارے پاس ذلیل ہوکرآئے وہ شخص چلا گیا اور کچھ عرصے بعد آپ ﷺ کے پاس آیا۔ او رکہنے لگا یا رسول اللہ ﷺ دنیا میرے پاس اس کثرت کے ساتھ آئی ہےکہ میں حیران ہوں کہاں  اٹھاؤں اور کہا ں رکھو

About admin

Check Also

کسی خوبصورت عورت کے شوہر نے اچانک داڑھی رکھ لی ، جب پڑوسن نے عورت سے پوچھا یکا یک تبدیلی کیسے آئی تو اس نے کیا جواب دیا ؟ ارشاد بھٹی کی ایک دلچسپ غیر سیاسی تحریر

مستنصر حسین تارڑ کا کہنا ’’کچھ لوگوں کو ’کیسے ہو‘ نہیں بلکہ ’کیوں ہو‘ کہنے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *