موت کے سوا ہر بیماری کا علاج

کچھ عرصہ پہلے میرے پاس ایک بچی کو لا یا گیا ۔ جس کے ماں باپ نے بتایا کہ یہ پیدائشی سنتی نہیں ہے اور ڈاکٹرو ں نے کہہ دیا ہے کہ اس کا کوئی علاج نہیں ہے۔ یا تو اس کو آلہ لگوا لو یا اس کا آپریشن ہو گا۔ الحمد اللہ ہم نے اس کا علاج کیا علاج کیا تھا۔ جو میں اکثر آپ لوگوں کو بتاتا ہوں کہ بچوں کو کوئی مسئلہ ہو جائے بچوں کی جتنی بھی بیماریاں ہیں سب کا بہترین علاج ہے ماں باپ کے وضو اور غسل سے اس کو غسل کر اؤ۔ اور الحمد اللہ اللہ شاہد ہے۔ کہ پندرہ دن میں اس بچی کی دوبارہ رپورٹ ۔ گیارہ دن انہوں نے عمل کیا۔ پندرہ دن بعد ہم نے دوبارہ رپورٹ کروائی اور واضح فرق رپورٹ میں آ یا۔ ابھی ایک ماہ مکمل نہیں ہوا اور وہ پچا س فیصد سننا شروع ہو گئ ہے ۔

صرف ماں باپ کے وضو سے اور غسل کے پانی سے غسل دینا طریقہ کیا ہے ۔ ایک بڑا سارا ٹپ لو۔ اس میں ماں پہلے وضو کر ے او ر پھر اس میں غسل کرے پھر باپ اس میں غسل کرے اور وضو کر ے ماں اور باپ کے وضو اور غسل کا پانی اور ایک دوسرا ٹپ لو۔ اس میں اتنا پانی ڈالو کہ اتنے اتنے ہاتھ اس میں ڈپ ہو جائیں اس میں کم از کم سات بیری کے پتے زیادہ جتنے بھی ہو جائیں اس میں بیری کے پتے ڈال لو اور جہاں بچہ سوتا ہے۔ اس کے بیڈ روم میں اس پانی کو لے جاؤ وہاں رکھو پانی میں ہاتھ ڈپ کرو۔ دائیں طرف ماں بیٹھے اور بائیں طرف باپ بیٹھے سات دفعہ سورۃ فاتحہ پڑ ھو ۔سات دفعہ آ یت الکرسی پڑ ھو۔

سات دفعہ سورۃ نشرح پڑ ھو۔ اور سات دفعہ چاروں قل ۔ یعنی سورۃ کافرون سات دفعہ۔ سورۃ اخلاص سات دفعہ سورۃ الناس سات دفعہ اور سورۃ الفلق سا ت دفعہ اور اول و آخر سات سات مرتبہ درودِ ابراہیم پڑھو۔ اور اس پانی کو جو ماں پاب کے وضو اور غسل والا پانی ہے اس میں جا کر مکس کردو روزانہ اس کو غسل دو۔ سورج نکلنے کے بعد سورج غروب ہونے سے پہلے پہلے واللہ ہے اتنا فائدہ ہے اس کا اتنا فائدہ ہے اس کا میرے پاس اور کئی قسم کے مریض اتنے مریض الحمد اللہ بہت سارے مریض تو ایسے تھے ان کی را ل ایسے بہتی تھی ۔ کہ کپڑے گیلے ہو جاتے تھے۔ الحمد اللہ ماں باپ نے صرف اپنے وضو اور غسل کے پانی سے اور بیری کے اوپر یہ قرآن کی آیات پڑ ھ کر اپنے بچوں کو غسل دیا ا س وقت الحمد اللہ سو فیصد بہتر ہیں۔ تو جو جو طریقہ میں نے بتا یا ہے اس طریقے کے تحت خود وضو اور غسل کریں اور اپنے بچوں کو بھی اس غسل اور وضو کے پا نی سے نہلا ئیں

About admin

Check Also

بو علی سینا اور لڑکی

کہتے ہیں کہ قدیم زمانے میں ایک رئیس کی بیٹی گھوڑا سواری کے دوران گھو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *