صرف دو چیزیں اور ایک رات میں انگر یز بن جاؤ گورے گورے

ایک بہت ہی خاص ریمیڈی آپ لوگوں کے لیے پیش کر نے والا ہوں جو بلیک ہے وہ گورا ہو جائے گا۔ اور اس کی رنگت بالکل ہی صاف شفا ف ہو جائے گی ۔ اگر آپ نے اپنے چکس کو ریڈ کر نا ہے کسی بھی برش کی مدد سے نہیں بلکہ اس ریمیڈی کے ذریعے۔ اپنے پورے فیس کو صاف کر نا ہے تو اس طرح سے اگر آپ چاہتے ہیں تو میری باتوں کو غور سے سنیے گا تا کہ میری باتوں پر عمل بھی کرسکیں ۔ تمام اجزاء بتا دیتے ہیں آپ کو اور ساتھ ہی ساتھ اس کو بنا بھی لیتے ہیں۔ سب سے پہلے چاہییں ہوں گی کہ گلاب کی پتیاں جو ہوتی ہیں وہ آپ لوگوں نے لینی ہیں ۔آج ہم ایک ایسی کریم بنانے والے ہیں جو کہ گلاب سے بنے گی بہت ہی زیادہ عمدہ کر یم ہے اور اپنے کلرز کو وائیٹ کرتے جائیے ۔

آپ لوگوں نے سب سے پہلے ایک بلینڈر لینا ہے جس میں آپ لوگوں نے ان گلاب کی پتیوں کا پیسٹ بنا لینا ہے کس چیز کے ساتھ پیسٹ بنا نا ہے۔ گلاب کی پتیاں اس گلینڈر میں ڈال کر ۔ اور ساتھ میں دوسرے نمبر پر یہ دودھ شامل کر نا ہے اتنا دودھ شامل کر نا ہے کہ یہ ایک پیسٹ بن جائے ایک چوتھائی کپ جو ہوتا ہے وہ ہم اس میں شامل کریں ۔ اب اس پیسٹ بنا لیں گے۔ اب پھول کی پتیوں اور دودھ کا ایک پیسٹ بن جا ئے گا۔ تیار ہو چکا ہے اب ہم اس کو رکھ دیں گے ایک الگ باؤل میں پہلے تو اس کو رکھ دیں گے ۔ اگلا جو پروسس ہو گا وہ سن لیجئے گا۔ چھنی کوئی بھی آپ لے سکتے ہیں۔ اب اس کو چھنی کی مدد سے چھا نتے جائیں گے تا کہ گلا ب کی پتیوں کا جو عرق ہے وہ ہمارے پا س نکل آ ئے۔

آپ لوگوں نے گلاب کی پتیوں کو ریڈ نہیں کر نا۔ کبھی کبھی جو پھول کی پتیاں سے ایسی کریم بناتے ہیں جو بنانے پر ریڈ ہو جاتی ہیں۔ کوئی پنک ہو جاتی ہیں ۔ کوئی اور کلر اختیار کر لیتی ہیں لیکن اصلی جو کلر ہوتا ہے جب پھول کی پتیاں دودھ میں حل ہوں گی تو ایسا کلر بن جائے گا۔ اب اس کا سارا عرق نکال دیں گے تا کہ ہمارے پاس صرف عرق ہی عرق رہ جائے آخر میں اور عرق ہم کسی چھنی کی مدد سے نکا لیں گے۔ کیو نکہ ہمیں صرف عرق کی ہی ضرورت ہے۔ جو کہ ہم اپنے فیس پر لگا سکتے ہیں اور پانے چہرے کو ترو تازہ کر سکتے ہیں اور ہر قسم کے داغ دھبوں سے بھی نجات حاصل کر سکتے ہیں۔ اب اس عرق میں ایلو ویرا جیل ایک چمچ یا دو چائے کے چمچ ڈال دینی ہے اور اس مکمل پیسٹ کو چہرے پر اپلائی کر نا ہے۔ اس سے آپ کے چہرے کو بہت ہی زیادہ فرق پڑ ے گا

About admin

Check Also

بو علی سینا اور لڑکی

کہتے ہیں کہ قدیم زمانے میں ایک رئیس کی بیٹی گھوڑا سواری کے دوران گھو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *