سہاگ رات میں قربت کیسے کریں

جما کیسے کریں ؟ اس کے لیے جائز ہے کہ وہ اپنی بیوی سے مقامِ پیدائش میں جما کر ے۔ حضرت سلیمان فارسی سے ثابت ہے کہ مجھے بیان کیا گیا کہ سلیمان فارسی نے ایک عورت سے شادی کی اور جب وہ اس عورت کے پاس آ نے لگے تو ان کی دیواروں پر پردے لٹکتے دیکھ کر دروازے میں ہی کھڑے ہو گئے انہوں نے کہا کہ میں نہیں جانتا کہ تمہارا گھر مخصوص افراد کے داخلے کے لیے ہے یا پھر کعبہ اس پہاڑی پر منتقل ہو گیا ہے۔ اللہ کی قسم ۔ میں اس وقت تک گھر میں داخل نہیں ہوں گا جب تک تم ان پردوں کو پھاڑ نہ دو جب انہوں نے پردے پھاڑ دیے تو وہ داخل ہوئے انہوں نے اپنی بیوی کے پاس آکر اس کے سر پر ہاتھ رکھا اور کہا اللہ مجھ پر رحم کرے کیا تم فرما نبردار ہے۔

اس نے جواب دیا آپ اس جگہ آ کر بیٹھے ہیں جہاں بیٹھنے والے کی اطاعت ہی کی جاتی ہے انہوں نے کہا بے شک مجھے رسول اللہ ﷺ نے کہا ہے کہ جب تو شادی کرے تو تم دونوں اللہ کی اطاعت پر ہی اکٹھے رہو۔ سو تم کھڑی ہو جاؤ تا کہ ہم دو رکعت نماز پڑ ھ لیں جب تو مجھے دعا کرتے ہوئے سنے تو آ مین کہنا پھر میاں بیوی نے دو رکعت نماز اداکی سلیمان فارسی نے اس کے پاس رات گزاری جب صبح ہوئی تو ان کے ساتھ آئے ان میں سے ایک آدمی آپ کو ایک کونے میں لے گیا اور کہا تم نے اپنی بیوی کو کیسا پا یا آپ نے اس سے منہ پھیر لیا پھر دوسرے نے پھر تیسرے نے یہی سوال کیا جب آپ نے یہ حالت دیکھی تو کہا اللہ تمہارے حال پر رحم کرے ۔

تم اس چیز سے متعلق سوال کرتے ہو جو دیواروں اور پردوں میں چھپائی گئی تھی آدمی کو چاہیے جو اس کے ظاہر ہو اس کے متعلق سوال کر ے ۔ چاہیے وہ کسی سمت سے ہو آگے سے ہو یا پیچھے سے ہو اس دعوے کی دلیل اللہ کا فر ما ن ہے ترجمہ : تمہاری عورتیں تمہاری کھیتی ہیں تم اپنی کھیتی میں جس طرح چاہو آؤ یعنی جس طرح تم چاہتے ہو کہ آگے سے یا پیچھے سے یعنی اگلے حصے میں جما کر و۔ اس کے متعلق بہت سی احادیث ہیں یہاں فقط دو کا ذکر ہی کافی ہے۔ اول ۔ یہودی کہا کرتے تھے کہ اگر کوئی آدمی اپنی بیو ی کے پیچھے ہو کر اس کے اگلے حصے میں جما کرے تو بچہ بھینگا پیدا ہوتا ہے اس پر یہ آیت اتری ترجمہ تمہاری عورتیں تمہاری کھیتیاں ہیں تم اپنی کھیتی میں جس طرح چاہو آ ؤ اس پر نبی کریم ﷺ نے فر ما یا آگے سے یا پیچھے سے مگر یہ کہ مقامِ پیدائش میں دوم ۔ مدینہ میں انصاریوں کا ایک قبیلہ آباد تھا جو کہ بتوں کی پو جا کرتے تھے

About admin

Check Also

بو علی سینا اور لڑکی

کہتے ہیں کہ قدیم زمانے میں ایک رئیس کی بیٹی گھوڑا سواری کے دوران گھو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *