زمین کی ساتویں تہہ میں بھی رزق ہوگاتو اللہ وہاں سے عطا فرمادے گا،ایمان افروز تحریر

ازمین کی ساتویں تہہ میں بھی رزق ہوگا تو اللہ وہاں سے بھی آپ کو عطافرمادے گا صرف آپ لوگوں نے بیس مرتبہ یہ جملہ بولنا ہے جو آپ کو بتایا جائے گا بیس مرتبہ بول کر زمین پر پھونک مار دیں انشاء اللہ زمین سے آپ کے لئے رزق نکل آئے گا اللہ پاک ارشاد فرماتا ہے ہم نے آسمان سے پانی برسایا اور ہم نے زمین کو پھاڑا اور پھر

ہم نے اس میں اناج اگایااناج میں انگور سبزیاں زیتون کھجوریں باغات ہر قسم کے پھل اور چارہ پیداکیا انہیں تمہارے اور تمہارے جانوروں کےفائدے کے لئے پیدافرمایا اللہ پاک انسان کو اس کی اور چوپایوں کی خوراک کاحوالہ دے کر یہ بات سمجھارہے ہیں۔کہ اے قیامت کا انکار کرنے والو دیکھو اور غور کرو کہ زمین میں پڑے ہوئے دانے کو اس سے کون نکالتا ہے اللہ تعالیٰ کے سوا اس دانے کو کوئی نکالنے اور اگانے والا نہیں وہی آسمان سے بارش نازل کرتا ہے اس کے سوا کوئی بارش نازل نہیں کرسکتا ہمیں جو بھی رزق ملتا ہے وہ سب کچھ اللہ پاک ہی عطافرماتا ہے ۔یہ ایک ایسا عمل ہے جو مالک زمین کو پھاڑ کر ہمیں رزق عطافرماتا ہے انشاء اللہ اگر آپ لو گ یہ عمل کر لیتے ہیں وہ پروردگار آپ کو وہاں سے رزق عطافرمادے گا

اگر آپ کا رزق آپ کے نصیب میں ہوگا اور زمین کی ساتویں تہہ میں بھی ہوگا تو اللہ پاک وہاں سے بھی آپ کو وہ رزق عطافرمادے گا۔کیونکہ وہ مالک ہے وہ خالق ہے وہ جب چاہے جہاں سے چاہے عطافرمادے سب کچھ اسی کے علم میں ہے ۔چھوٹا سا یہ عمل ہے سب سے پہلے بسم اللہ الرحمن الرحیم پڑھ لیں اور پھر اول و آخر درود پاک پڑھ کر ایک بار درود پاک پڑھ کر بیس مرتبہ یہ جملہ بولنا ۔یَاربِ یَاقَاضِیَ الحَاجَاتِ ۔بیس مرتبہ اس جملہ کو ورد کرنا ہے پھر آخر میں درود ابراہیمی پڑھ کر جہاں پر آپ کھڑے ہیں وہیں زمین پر پھونک ماردیںکوشش کریں کہ پاک جگہ پر کھڑے ہوجائیں اور زمین پر پھونک ماردیں انشاء اللہ دن میں صرف ایک مرتبہ یہ عمل کر لیں

زمین کی جس جس تہہ میں آپ کے لئے رزق ہوگا اللہ پاک آپ کو وہاں سے رزق عطا فرمادے گا ۔یہ بہت ہی زیادہ پاور فل عمل ہے اس عمل کو ضرور کیجئے کیونکہ وہی پروردگار ہے جو زمین سے ہمارے لئے باغات کھانے پینے کی اشیاء پیدا فرماتا ہےاوروہی زمین سے ہمیں رزق عطافرماتا ہے اس عمل کو آپ لوگ خود بھی کریں اور اپنی بھائیوں کو دوستوں کو بھی اس سے آگاہ فرمائیے۔

About admin

Check Also

بو علی سینا اور لڑکی

کہتے ہیں کہ قدیم زمانے میں ایک رئیس کی بیٹی گھوڑا سواری کے دوران گھو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *