رمضان میں بس 6 سورتیں پانی پر پڑھو ،ہر بیماری سے شفاء ، جنہیں کینسر ہے وہ ایک بار یہ عمل ضرور کریں

رمضان المبارک روزوں کے ساتھ ساتھ عبادات اور دیگر معمولات کا مہینہ بھی ہے ۔ رمضان المبارک میں ان معمولات کا اہتمام کیجئے ۔بعد از نماز فجر: پانچواں کلمہ 70 مرتبہ،،بعد از نماز ظہر: سات سلام 17 مرتبہ، سلامٌ قولاً من رب الرحیم۔پروردگار مہربان کی طرف سے سلام کہا جائے گا۔ سلامٌ علی نوح فی العلمین۔سلامتی ہے نوح پر جہان میں سلامٌ علی ابراہیم۔ابراہیم پر سلام ہو۔ سلامٌ علی موسی وھارون۔موسیٰ اور ہارون پر سلام ہو سلامٌ علی الیاسین۔الیاسین پر سلام ہو سلامٌ علیکم طبتم فادخلوھا خالدین۔تم پر سلام تم بہت اچھے رہے پس ہمیشہ کی جنت میں داخل ہو جاؤ۔ سلامٌ ھی حتی مطلع الفجر۔یہ رات طلوع صبح تک امان اور سلامتی ہےبعد از نماز عصر: آیت الکرسی 27 مرتبہ،بعد از نماز مغرب: درود ابراہیمی 33 مرتبہ،بعد از نماز عشاء: صلوٰۃ الحاجات4رکعت نفل 1 مرتبہ اور استغفار کی 2 تسبیح پہلی شب قدر 21 ویں شب: اکیسویں شب کو چار نفل پڑھیں

ہر رکعت میں بعد سورہ فاتحہ یعنی الحمد شریف کے بعد سورہ انا انزلنا ایک بار اور سورہ اخلاص یعنی قل شریف ایک بار پڑھیں بعد از سلام 70 مرتبہ درود شریف پڑھیں انشاء اللہ اس نماز کے پڑھنے والے کے حق میں فرشتے دعا کریں گے۔اکیسویں شب میں 2رکعت نفل نماز پڑھیں ہر رکعت میں سورہ الحمد شریف کے بعد اناانزلنا ایک بار اور قل شریف تین بار پڑھنی ہے۔اس رات کا خاص وظیفہ:21 مرتبہ سورہ القدر (اناانزلنا) پڑھنا ہے۔رمضان المبارک میں ان چھ سورتوں کو پانی پر دم کر کے پانی کو استعمال کریں تو ہر بیماری سے شفاء ملے گی اور وہ چھ سورتیں یہ ہیں :سورہ یٰسین ،الملک،النصر،اخلاص، الفلق، الناس۔ان چھ سورتوں کو پڑھ کر پانی پر دم کر لیجئے اور پھر اس پانی کو استعمال کیجئے انشاءاللہ ہر طرح کی لاعلاج بیماری سے شفاء ملے گی ۔حضرت ابوہریرۃ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا کہ

حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا: جس شخص نے ایمان اور احتساب کے ساتھ رمضان کا روزہ رکھا اس کے پچھلے گناہ معاف کردیے جاتے ہیں۔اس حدیث مبارکہ میں روزہ رکھنے اور رمضان المبارک میں قیام کرنے کے ساتھ ایمان اور احتساب کی شرط لگا دی‘ یعنی اس حالت میں رمضان المبارک کے روزے رکھے اور راتوں کو قیام کرے کہ حضور سے ثابت شدہ سب چیزوں کی تصدیق کرے اور فرضیت ِ صوم کا اعتقاد بھی رکھے تو اس کو ایمان کا روزہ کہا جائے گا۔احتساب کا معنی یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ سے طلبِ ثواب کے لئے یا اس کے اخلاص کی وجہ سے روزہ رکھا اور روزے کی حالت میں صبر کا مظاہرہ اور اپنے نفس کا محاسبہ کرتا رہا۔جو آدمی ایمان اور احتساب کے ساتھ رمضان المبارک کے روزے رکھتا ہے اور رمضان المبارک کی راتوں میں قیام کرتا ہے تو اس کے تمام صغائر معاف کردیے جاتے ہیں۔ اور کبائر کی معافی کی امید رکھی جاسکتی ہے یا کبائر کا بوجھ ہلکا بھی ہوسکتا ہے۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو

About admin

Check Also

بو علی سینا اور لڑکی

کہتے ہیں کہ قدیم زمانے میں ایک رئیس کی بیٹی گھوڑا سواری کے دوران گھو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *