جمعرات کے دن کے زبردست وظائف

آج جو وظیفہ لے کر میں آپ کی خدمت میں حاضر ہوئی ہوں۔ وہ اللہ تعالیٰ کے نام کے متعلق ہے ایک ایسا وظیفہ ہے جو جمعرات کے دن کر نے سے اللہ تعالیٰ آپ کی ہر دعا کو قبول کر یں گے۔ انشاء اللہ آپ جو بھی اللہ سے دعا مانگیں گے اللہ تعالیٰ کے بارگاہ وہ قبولیت کا درجہ پائے گی۔ یہ عمل آپ ہر جمعرات کو کر سکتے ہیں اس کے لیے کوئی جمعرات خاص نہیں ہے اس عمل کو کرنےکے لیے چند شرائط بھی ہیں کیو نکہ بہت سے لوگ کہتے ہیں کہ ہم نے عمل کیا ہم نے وظیفہ تو کر لیا لیکن ہماری تو دعا قبول ہی نہیں ہوئی۔ ہم آپ کے بتائے ہوئے وظائف تو کر لیتے ہیں۔

لیکن ہمیں اس سے کوئی فائدہ نہیں ہوتا تو میں آپ کو وظیفے کے بعد بتاؤں گی اس کی چند وجو ہات کہ کس وجہ سے آپ کی دعائیں قبول نہیں کی جاتیں یا کس وجہ سے آپ کی دعائیں قبولیت کا درجہ نہیں پا سکتیں۔ یا کس وجہ سے آپ کی مراد پوری نہیں ہوتی آپ کی مشکل حل کیوں نہیں ہوتی تو وظیفہ بتانے سے پہلے میری آپ سے چھوٹی سی گزارش ہے کہ میری ہر بات کو غور سے سنیے گا تا کہ اس عمل کو اس وظیفے کو بہترین طریقے سے سر انجام دے سکیں۔ اور اپنی مرادیں پوری کروا سکیں اللہ کے فضل و کرم سے جو وظیفہ جو خاص اللہ کے نام کا وظیفہ جو میں شیئر کنے لگی ہوں وہ اللہ کے نام ” یاسمیع” کے متعلق ہے کہ اس کا مطلب ہے کہ اے خوب سننے والے اللہ تعالیٰ کے نام ِ خاص میں سے ہے۔

کہ جو کوئی اس کو جمعرات کے دن چاشت کی نماز ادا کر نے کے بعد چاشت کا وقت دس بجے سے لے کر زوال کے وقت سے پہلے تک ہوتا ہے کہ آپ نے دس بجے سے لے کر ساڑھے گیارہ بجے تک اس نماز کو ادا کر لینا ہے۔ اس نماز کو پڑ ھنے کے بعد آپ نے پانچ سو مرتبہ اللہ کے اس نام کو اس مبارک نام کو ” یاسمیع ” کو پڑ ھنا ہے اب آپ اللہ کی بارگاہ میں جو بھی دعا مانگیں گے اللہ پاک اس کو قبول فر ما ئیں گے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس کا وظیفہ یہ بھی ہے کہ آپ نے جمعرات کے دن جب فجر کی نماز پڑ ھنی ہے تو اس کی سنتیں پڑ ھنے کے بعد آپ نے تھوڑا وقفہ کر نا ہے اور سو مرتبہ آپ نے “یاسمیع” کو پڑ ھنا ہے اس کے بعد آپ نے فرض نماز ادا کر نی ہے تو انشاء اللہ اللہ تعالیٰ اس کے بعد مانگی گئی ہر دعا کو قبول فر مائیں گے۔ اس کے ساتھ ساتھ میں آپ کو یہ بھی بتاؤں گی کہ یہ بہت ہی مجرب عمل ہے بہت ہی مجرب وظیفہ ہے جسے کرنے سے انشاء اللہ ہر دعا قبول ہو گی اللہ تعالیٰ کی بارگاہ میں

About admin

Check Also

بو علی سینا اور لڑکی

کہتے ہیں کہ قدیم زمانے میں ایک رئیس کی بیٹی گھوڑا سواری کے دوران گھو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *