انڈے کے چھلکے کے حیرت انگیز فوائد

انسانی جسم میں تمام ضروری اجزاء میں کیلشیئم کی موجودگی سب سے اہم تصور کی جاتی ہے۔ کیونکہ یہ نہ صرف جسم میں موجود دانتوں، ہڈیوں کے ساتھ ناخنوں اور بالوں کی مضبوطی کے لیے اہم کردار ادا کرتا ہے بلکہ انسانی نروس سٹم یا اعصابی نظام اور مسلز پر بھی اس کے مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ یہ ہارٹ بیٹ کو معتدل یا نارمل رکھتا ہے اور بہترین پرسکون نیند آنے کا سبب بھی بنتا ہے مجموعی طور پر یہ بات بڑے وثوق سے کہی جاسکتی ہے کہ کیلشیئم ہمارے جسم کے لیے انتہائی مفید اور فائدہ مند ہے جسم میں کیلشیئم کی موجودگی کے بے شمار فوائد ہیں لیکن ایسی کئی وجوہات ہیں جن کی بناپر جسم میں کیلشیئم کی کمی واقع ہو سکتی ہے خاص طور پر وہ افراد جو چائے، کافی،الکحل اور کاربونیٹڈ مشروبات کا کثرت سے استعمال کرتے ہیں۔ حاملہ خواتین یا وہ خواتین جن کا حیض آنا بند ہوچکا ہو اور بوڑھے افراد خاص طور سے وہ افراد جن کا نظام ہاضمہ درست کام نہ کر رہا ہو ایسے تمام لوگوں میں کیلشیئم کی شدید کمی واقع ہوسکتی ہے اس کمی کو پورا کرنے کے لیے ایک انتہائی آسان مفید نسخہ ہے

جس کے فوائد آپ کو حیران کردیں گے۔ ہر گھر میں پایا جانا والا انڈا کیلشیئم کے حصول کا سب سے بہترین ذریعہ سمجھا جاتا ہے لیکن حیرت انگیز طور پر انڈے کے چھلکے میں موجود کیلشیئم کی بڑی مقدار جسم میں کیلشیئم کی کمی کو پورا کرنے میں اہم کردار ادا کرسکتی ہے۔ ایک انڈے کے چھلکے میں نوے فی صد تک کیلشیئم کی مقدار پائی جاتی ہے۔ اور یہ معدنیات حاصل کرنے کا ایک قدرتی ذریعہ ہے انسانی جسم میں یہ باآسانی جذب یا ہضم ہوجاتا ہے کیونکہ انڈوں کے چھلکوں میں انسانی دانتوں یا ہڈیوں جیسی ہی مضبوطی پائی جاتی ہے۔ انڈے کے چھلکوں کا استعمال نہ صرف جسم میں واقع کیلشیئم کی کمی کو پورا کرتا ہے بلکہ ہائی بلڈ پریشر کو کنٹرول میں رکھتاہے نہ صرف یہ بلکہ خون میں نئے خلیات بننے کا سبب بھی بنتا ہے۔ایک انڈے کے چھلکے میں نہ صرف کیلشیئم بلکہ آئرن، کاپر، میگنشیئم، زنک، فلورین، فاسفورس، کرومیم اور مولیبڈینم کی وافر مقدار پائی جاتی ہے۔ ماہرین کی اکثریت اس بات سے متفق نظر آتی ہے کہ کیلشیئم سے بھر پور ایک انڈے کا چھلکا ہر لحاظ سے انسانی جسم کے لئے مفید ہے ایک اوسطاً عمر کے لحاظ سے دن میں ایک مرتبہ 1.5سے 3 گرام تک ایگ شیل لیا جاسکتا ہے ایگ شیل کی اتنی مقدار کافی ہوتی ہے۔اکثر مرد و خواتین کو تھائی رائڈ گلینڈ کی بیماری کی شکایت ہوتی ہے۔

اس کے لیے آٹھ انڈوں کے چھلکوں کو پیس لیں بالکل باریک سفوف کی شکل میں۔ پھر اس میں دولیموں کے رس ڈال کر کچھ دنوں کے لیے اس آمیزے کو ریفریجریٹر میں رکھ دیں جب ایگ شیل لیمن جوس کو جذب کرلیں اور نرم پڑ جائیں تب اس میں چار ٹیبل اسپون شہد شامل کرکے رکھ دیں۔ اس آمیزے کو سات دن کے بعد استعمال کریں۔ روزانہ ایک چائے کا چمچہ ہر کھانے کے بعد تین یا چار بار کھائیں۔ایک انڈے کے پسے ہوئے چھلکے کو ایک ٹیبل اسپون چینی اور ایک ٹیبل اسپون پسے ہوئے اخروٹ کے ساتھ اچھی طرح سے مکس کرلیں جب یکجاں ہو جائیں تواس آمیزے کو بیس (20) دنوں کے لیے رکھ دیں۔ بیس دن کے بعد اسے روزانہ تین دفعہ ایک چمچہ کھائیں السر کی شدید شکایت بھی اسے کھانے سے دور ہوجائے گی۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

About admin

Check Also

جب بھی میں الماری کھولتی میرے کپڑے کترے ہوئے ملتے

اس روز میں اپنے دوست کے ساتھ ان کے پیر صاحب کو سلام کرنے گیا …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *